ویکسین کے بارے مین 20 اعلٰی سوالات

  1. ویکسین کیسے کام کرتے ہیں؟ کیا وہ وائرس اور بیکٹیریا کے خلاف کام کرتے ہیں؟
  2. کیوں تمام ویکسین 100% مؤثر نہیں ہیں؟
  3. بہت سارے ویکسین کیوں موجود ہیں؟
  4. کیا قدرتی مامونیت ویکسین سے حاصل کردہ مامونیت سے بہتر ہے؟
  5. کچھ ویکسین کو بوسٹرز کی ضرورت کیوں ہوتی ہے؟
  6. کیا آپ کسی ایسے ویکسین سے بیمار ہو سکتے ہیں جسے اس کی روک تھام کے لئے تیار کیا گیا ہے؟ اور کچھ ویکسین میں لائیو پیتھوجینز کیوں ہوتے ہیں جبکہ دوسروں میں مارے ہوئے پیتھوجینز ہوتے ہیں؟
  7. کیابچہکامدافعتینظاماتنےسارےویکسینکوسنبھالسکتاہے؟
  8. اجتماعی مامونیت کیا ہے؟ کیا یہ اصلی ہے؟ کیا یہ کام کرتی ہے؟
  9. کیوں انڈے کی الرجی کچھ ویکسین حاصل کرنے کی ایک غیر موافق علامت ہے؟
  10. میں نے کچھ لوگوں کو یہ کہتے ہوئے سنا ہے کہ ویکسین طویل مدتی صحت کے مسائل کا سبب بنتے ہیں جیسے کہ ڈائبٹیز، بانجھ پن، اور آٹزم۔ کیا یہ سچ ہے؟
  11. مجھےمیرےبچہکیحالیہمامونیتمیںکچھمعلوماتحاصلہوئیہےجسمیںویکسینکےبہتسےممکنہضمنیاثراتدرجہیں۔اگرویکسینیشناسطرحکےتمامضمنیاثراتکاسبببنسکتاہےتوپھراسکامشورہکیوںدیاجاتاہے؟
  12. کیاہمویکسینکےساتھکافیحفاظتیٹیسٹنگکرتےہیں؟
  13. کیاویکسینایبورٹیڈجنینیٹشویاجلیٹنپرمشتملہوتےہیں؟
  14. کیایہسچنہیںہےکہویکسینکےبجائےبہترحفظانصحتاورغذائیتامواتاوربیماریکیشرحمیںکمیکےذمہدارتھے؟
  15. ہم چیچک کی طرح دیگر بیماریوں کو کیوں ختم نہیں کر سکتے ہیں؟
  16. 2014年5月月月月月月月月月月月月月月月月月月月月月月月月月月月月月月月月月月月月月月月月月月月月月月月月月月月月月月月月月月月月月月月月月月月月月月月月月月月月月月月月月月月月月月月月月月月月月月月月月月月月月月月月月月月月月月月月月月月月月月月月月月月月月月月月月月月月月月月月月月月月月月月月月月月月月日日日日日日日日日日日日日日日日日日日日日日日日日日日日日日日日日日日日日日日日日日日日日日日日日日日日日日日日日日日日日日日日日日日日日日日日日日日日日日日日日日日日日日日日日،
  17. 卡介苗
  18. مجھےجگرکےمسائلنہیںہیںاورنہہیمیرےخاندانکوہیپاٹائٹسہے۔ہیپاٹائٹس بی ویکسین بچوں کے لئے کیوں ضروری ہے؟
  19. تشنج کے ویکسین کا میرے بچہ کے ساتھ کیا تعلق ہے؟ وہ کہیں گرا نہیں تھا اور نہ ہی اسے کسی طرح کے کٹس یا چوٹیں لگی ہیں۔
  20. ٹائیفائیڈ ویکسین لگوانا کیوں ضروری ہے؟ اور کیوں کچھ ڈاکٹر اسے موسم بہار میں لگوانے کا مشورہ دیتے ہیں؟

  1. ویکسین کیسے کام کرتے ہیں؟ کیا وہ وائرس اور بیکٹیریا کے خلاف کام کرتے ہیں؟

    ویکسین مستقبل میں ہونے والی کسی مخصوص بیماری کے "حملوں" کے خلاف آپ کے قوت مدافعت کو تیار کرنے کا کام کرتے ہیں۔ وائرل اور بیکٹیریل پیتھوجینز دونوں، یا بیماری پیدا کرنے والے ایجنٹوں کے خلاف ویکسین موجود ہیں۔

    جب کوئی پیتھوجین آپ کے جسم میں داخل ہوتا ہے تو، آپ کا مدافعتی نظام اس سے لڑنے کی کوشش کرنے کے لئے اینٹی باڈیز کو جنریٹ کرتا ہے۔ آپ کا بیمار ہونا یا ہونا آپ کے مدافعتی ردعمل کی طاقت اور کس مؤثر طریقہ سے اینٹی باڈیز پیتھوجین سے لڑتی ہے اس پر منحصر ہے۔ اگر آپ بیمار پڑ جاتے ہیں تو، تاہم، پیدا کی گئی کچھ اینٹی باڈیز آپ کے جس میں آپ کے تندورست ہو جانے پر ایک محافظ کے طور پر قائم رہیں گی۔ اگر آپ مستقبل میں اسی پیتھوجین کی زد میں آ جاتے ہیں تو، اینٹی باڈیز اس کی ’’شناخت‘‘ کر لیں گی اور اسے مار بھگائیں گی۔ ویکسین اسی قوت مدافعت کی وجہ سے کام کرتے ہیں۔ انہیں ایک ہلاک شدہ، کمزور، یا پیتھوجین کے جزوی ورژن سے بنایا جاتا ہے۔ جب آپ کوئی ویکسین لگواتے ہیں تو، یہ پیتھوجین کے جس روژن پر بھی مشتمل ہو اس میں آپ کو بیمار کرنے کی طاقت یا بھرپور تعداد موجود نہیں ہوتی ہے، لیکن یہ اپنے خلاف آپ کی قوت مدافعت کے ذریعہ اینٹی باڈیز پیدا کروانے کے لئے کافی ہے۔ اس کے نتیجہ میں، آپ بیمارے ہوئے بغیر بیماری کے خلاف مستقبل کی مامونیت حاصل کر لیتے ہیں: اگر آپ دوبارہ پیتھوجین کی زد میں آ جاتے ہیں تو، آپ کی قوت مدافعت اس کی شناخت کرنے اور اسے مار بھگانے کے قابل ہوگا۔ بیکٹیریا کے خلاف کچھ ویکسین بیکٹیریا کی خود کی ایک شکل کے ساتھ بنائے جاتے ہیں۔ دوسری صورتوں میں، انہیں بیکٹیریا کے ذریعہ جنریٹ کئے گئے ٹاکسن کی ایک ترمیم شدہ شکل کے ساتھ بنایا جا سکتا ہے۔ مثال کے طور پر، تشنج، براہ راستکلاسٹریڈیم کزازی بیکٹیریاکی وجہ سے براہ راست طور پر پیدا نہیں ہوتا ہے۔اسکےبجائے،اسکیعلاماتبنیادیطورپر،ٹیٹینواسپیسمن،اسبیکٹیریمکےذریعہجنریٹشدہایکٹاکسنکیوجہسےپیداہوتیہیں۔اسوجہسےکچھبیکٹیریلویکسینٹاکسنکےکمزوریاغیرفعالورژنکےساتھبنائےجاتےہیںجواصلمیںبیماریکیعلاماتپیداکرتےہیں۔اسکمزوریاغیرفعالٹاکسنکوٹاکسائیڈکہاجاتاہے۔مثالکےطورپر،ایکتشنجکیمامونیتکو،ٹیٹینواسپیسمنٹاکسائیڈکےساتھبنایاجاتاہے۔

  2. سبسےاوپر

  3. کیوں تمام ویکسین 100%مؤثر نہیں ہیں؟

    ویکسینکوایکمدافعتیردعملپیداکرنےکےلئےڈیزائنکیاجاتاہےجوبیماریکےمستقبلکےانکشافاتکےدورانٹیکہلگوانےوالےفردکیحفاظتکرےگا۔حالانکہ،انفرادیقوتمدافعت،کافیمختلفہوتےہیںجسےکچھصورتوںمیں،کسیشخصکیقوتمدافعتایکمناسبردعملجنریٹنہیںکرےگا۔اسکےنتیجہمیں،وہمامونیتکےبعدمؤثرطریقہسےمحفوظنہیںہوگا/ہوگی۔اسلئےکہاجاتاہےکہ،زیادہترویکسینکیتاثیراعلٰیہوتیہے۔MMRویکسین(خسرے،گلپھڑےاورروبیلا)یاواحدخسرےکیویکسینکیدوسریخوراکحاصلکرنےکےبعد،ٹیکہلگوانےوالا99.7ےفرادخسرہسےمحفوظہوتےہیں۔غیرفعالپولیوویکسینتینخوراککےبعد% 99کیتاثیرفراہمکرتاہے۔(چواریسیلایچک)ویکسینواریسیلاکےتمامانفیکشنزکیروکتھاممیں% 85اور% 90کےدرمیانمؤثرہیں،لیکنمعتدلاورشدیدچیچککیروکتھاممیں% 100مؤثرہیں۔

  4. سبسےاوپر

  5. بہت سارے ویکسین کیوں موجود ہیں؟

    فیالحال،پیدائشسےلےکرچھسالکےدرمیانکیعمرتککےتمامبچوںکےلئے谁کےبچپنکےویکسینیشنکےمشورںمیں11مختلفبیماریوںکےلئےحفاظتیٹیکےشاملہیں۔ہربیماریجسکےلیےویکسینکامشورہدیاجاتاہےشدیدبیمارییاموتکاسبببنسکتاہے،اورویکسینیشنکیشرحکمہوجانےپرفوریطورپردوبارہظاہرہوناشروعہوسکتاہے۔پاکستان،افغانستان،اورکچھمشرقیوسطیاورافریقیممالکمیں،مذہبی،ثقافتی،اورسیاسیعواملکےویکسینیشنکیشرحمیںگراوٹکاسبببننےکےبعدپولیواورخسرہپھیلنےکےواقعاتنمودارہوئےہیں۔انبیماریوںنےکچھلوگوںکوزندگیبھرکےلئےجسمانیطورپرمعذوربنادیاہے۔جنگلیانفیکشنسےدرپیشخطراتکےمدنظرہرویکسینکوطےشدہوقتپرجاریرکھنےکامشورہدیاجاتاہے۔

  6. سبسےاوپر

  7. کیا قدرتی مامونیت ویکسین سے حاصل کردہ مامونیت سے بہتر ہے؟

    کچھصورتوںمیں،قدرتیمامونیتویکسینیشنسےحاصلمامونیتکےمقابلےمیںطویلپائیدارہوتیہے۔قدرتیانفیکشنکے خطرات، تاہم، ہر مشورہ شدہ ویکسین کے لئے حفاظتی ٹیکوں کے خطرات سے زیادہ اہمیت کے حامل ہیں۔ مثال کے طور پر، 1،000 متاثرہ افراد میں سے ایک کے لئے جنگلی خسرے کے انفیکشن اینسیفیلائیٹس (دماغی سوزش)在15 15 15 5 5 5 5 5 5 5月月月月月15 15 15 15 15 15 15 5 5 5 5 5 5 5 5 5 5 5 5 5 5 5 5 5 5 5 5 5 5 5 5 5 5 5 5 5 5 5 5 5 5 5 5 5 5 5 5 5 5 5 5 5 5 5 5 5 5 5 5 5 5 5 5 5 5 5 5 5 5 5 5 5 5 5 5 5 5 5 5 5 5 5 5 5 5 5 5 5 5 5 5 5 5 5 5 5 5 5 5 5 5 5 5 5 5 5 5 5 5 5 5 5月月月月月月月月月月月月月月月月月月的的的的的,在在在在上,在在在上上上,对对对对对对对对对对对对对对对对对对上上上上的的15 15 15 15 15 15 15 15 15 15 15 15 15 15 15 15 15 15 15 15 5 5 5 5 5 5 5 5 5 5 5 5 5 5 5 5 5 5 5 5 5 5 5 5 5 5 5 5 5 5 5 5 5月5日日的自自15月5日日日日日日日日日日日日日日日日日日日日方方方方方方方方方方方方方方方方方方方方方方方方方方方方方方方方方方方方方方方方方方方方方方方方方方方方方方方方方方方方方方方方方方方方方方方方方方方方方方方方方方方方方方方方方方方方方方方方方方方方方方方方方方方方方方方方方方方方方方方方方方方方方方方方方方方方方方方方方方方方方方方方方方方方方方方方方方方方方方方方方方方方方方方方方方方方方方方方方方方方方方方方方方方方方方方方方方方方方方方方方方方方方方方方方方(四)货币市场部(MMR) ویکسین فیملینٹیکہلگوانےوالےافرادمیںصرفایککےشدیدالرجکردعملکاسبببنتاہے۔ویکسینکےذریعہحاصلمامونیتکےفوائدغیرمعمولیقدرتیانفیکشنکےسنگینخطراتکےمقابلہمیںزیادہہوتےہیں۔اسکےعلاوہ،تشنجکیویکسین،اورکچھدیگرویکسینز،اصلمیںقدرتیانفیکشنسےزیادہمؤثرمامونیتہے۔

  8. سبسےاوپر

  9. کچھ ویکسین کو بوسٹرز کی ضرورت کیوں ہوتی ہے؟

    یہمکملطورپرسمجھانہیںجاسکاہےکہحاصلمامونیتکیلمبائیمختلفویکسینکےساتھمختلفکیوںہوتیہے۔کچھصرفایکخوراککےساتھزندگیبھرکیمامونیتکیپیشکشکرتےہیںجبکہدوسروںکومامونیتبرقراررکھنےکےلئےبوسٹرکیضرورتہوتیہے۔حالیہتحقیقنےیہتجویزپیشکیہےکہکسیخاصبیماریکےخلافقوتمدافعتکےتسلسلکاانحصاراسرفتارپرہوسکتاہےجسکےساتھبیماریعامطورپرجسممیںفروغحاصلکرتیہے۔اگرکوئیبیماریبہتتیزیسےبڑھتیہےتو،قوتمدافعتکییادداشتکاردعمل(جوکہ،وہ”محافظاینڈیباڈیز”ہیںجوکسیپچھلےانفیکشنیاویکسینیشنکےبعدجنریٹہوتیہیں)انفیکشنکیروکتھامکےلئےفوریطورپرردعملکااظہارکرنےکےقابلنہیںہوسکتاہے——جبتکانہیںحالیہطورپرمناسبطریقہسےبیماریکےبارےمیںیاددہانینہکیجائےاوروہپہلےسےہیاسکی نگرانی نہ کر رہے ہوں۔ بوسٹرز آپ کی قوت مدافعت کے لئے ایک "یاد دہانی" کے طور پر خدمت انجام دیتے ہیں۔

    ویکسینکےذریعہجنریٹہونےوالیمامونیتکےتسلسلپرتحقیقجاریہے۔

  10. سبسےاوپر

  11. کیا آپ کسی ایسے ویکسین سے بیمار ہو سکتے ہیں جسے اس کی روک تھام کے لئے تیار کیا گیا ہے؟ اور کچھ ویکسین میں لائیو پیتھوجینز کیوں ہوتے ہیں جبکہ دوسروں میں مارے ہوئے پیتھوجینز ہوتے ہیں؟

    پیتھوجینز کے ہلاک شدہ ورژن—یا پیتھوجین کے صرف ایک حصہ کے ساتھ کے ساتھ بنائی جانے والی ویکسین—بیماری کی وجہ بننے کے قابل نہیں ہیں۔ جب کوئی شخص ان ویکسین کو حاصل کرتا ہے تو، اس کا بیماری کے ساتھ بیمار ہونا نا ممکن ہے۔ لائیو، رقیق (یا کمزور) ویکسیننظریاتی طور پربیماری کا سبب بننے کی صلاحیت رکھتے ہیں: کیونکہ وہ اب بھی نقل (اگرچہ بہت اچھی طرح نہیں) تیار کر سکتے ہیں، میوٹیشن ممکن ہے، جس کا نتیجہ پیتھوجین کی زہر آلود شکل ہو سکتی ہے۔ اگرچہ، اس بات کو ذہن میں رکھتے ہوئے، اور ترقیق شدہ طور پر اس امکان کو کم سے کم کرتے ہوئے انہیں ڈیزائن کیا گیا ہے۔ ۔ اس بات کا خیال رکھنا بہت ضروری ہے کہ کمزور قوت مدافعت والے افراد کے لئے جیسے کہ کینسر کے مریض، رقیق ویکسین سنگین مسائل پیدا کر سکتے ہیں۔ یہ افراد دستیاب ہونے کی صورت میں ویکسین کی ہلاک شدہ شکل حاصل کر سکتے ہیں۔ نہیں تو، ان کے ڈاکٹر ویکسینیشن کے مقابلہ میں اس کا مشورہ دے سکتے ہیں۔ اس طرح کے معاملات میں، افراد تحفظ کے لئے اجتماعی مامونیت پر انحصار کرتے ہیں۔

    اسیلئےکچھویکسینلائیوپیتھوجینزپرمشتملہوتےہیںاوردیگرہلاکشدہپیتھوجینزپر،وجوہاتبیماریکےلحاظسےمختلفہوتیہیں۔حالانکہ،عامطورپرکہاجائےتو،لائیو،رقیقویکسینہلاکشدہویکسینکےمقابلہمیںطویلپائیدارمامونیتجنریٹکرتےہیں۔اسطرح،ہلاکشدہویکسینزکیمامونیتکوبرقراررکھنےکےبوسٹرکیزیادہضرورتہونےکاامکانہے۔حالانکہ،ہلاکشدہویکسین،بھیاسٹوریجکےمقاصدکےلئےزیادہمستحکمہونےکیکوششکرتےہیں،اوربیماریکاسببنہیںبنتےہیں۔طبیکمیونٹیکواسکافیصلہکرنےمیںزیادہتوازنرکھناضروریہےکہکسیخاصبیماریکےخلافکسطرحکانقطہنظراستعمالکیاجائے۔

  12. سبسےاوپر

  13. کیابچہکامدافعتینظاماتنےسارےویکسینکوسنبھالسکتاہے؟

    ہاں۔ تحقیقات سے پتہ چلتا ہے کہ حالیہ طور پر مشورہ کردہ تعداد سے زیادہ شیر خوار بچہ کی قوت مدافعت ایک وقت میں کئی ویکسین کے حصول کو سنبھال سکتی ہے۔ مامونیت کا شیڈیول مدافعتی ردعمل پیدا کرنے کی شیرخوار بچوں کی صلاحیت، ساتھ ہی ساتھ ان کے مخصوص بیماریوں کی زد میں آنے کے خطرہ پر مبنی ہے۔ مثال کے طور پر، پیدائش کے وقت ماں سے بچہ میں منتقل ہونے والی مامونیت فقط عارضی ہے، اور اس میں مخصوص طور پر پولیو اور ہیپاٹائٹس بی کے خلاف قوت مدافعت شامل نہیں ہے۔

  14. سبسےاوپر

  15. اجتماعی مامونیت کیا ہے؟ کیا یہ اصلی ہے؟ کیا یہ کام کرتی ہے؟

    اجتماعیمامونیت،جسےکمیونٹیکیمامونیتکےطورپربھیجاناجاتاہے،سےمراداعلیویکسینیشنکیشرحکےلحاظسےایککمیونٹیمیںہرکسیکوپیشکردہتحفظسےہے۔ایکفراہمکردہبیماریکےخلافکافیلوگوںکےٹیکےلگوالینےکےبعد،بیماریکاکمیونٹیمیںقدمجمانامشکلہے۔کسیشورشکےامکاناتکوکمکرتےہوئےجوانہیںبیماریکیزدمیںلاسکتاہے،دائمیبیماریوںکےساتھنوزائیدہبچوںاورافرادکوشاملکرتےہوئے——یہانلوگوںکےلئےکچھتحفظفراہمکرتاہےجوویکسینحاصلکرنےسےقاصرہیں۔

  16. سبسےاوپر

  17. کیوں انڈے کی الرجی کچھ ویکسین حاصل کرنے کی ایک غیر موافق علامت ہے؟

    انفلوئنزا کے خلاف ویکسین کی اکثریت کو شامل کرتے ہوئے، کچھ ویکسین، مرغی کے انڈوں میں پائے جاتے ہیں۔ ویکسین کی تعمیر کے عمل کے دوران، انڈے کے پروٹین کی اکثریت کو ہٹا دیا جاتا ہے، لیکن اس میں یہ تشویش ہے کہ یہ ویکسین انڈے کی الرجی والے افراد میں الرجک رد عمل کا سبب بن سکتے ہیں۔ ایک حالیہ رپورٹ سے پتہ چلا ہے کہ انڈے کی الرجی والے زیادہ تر بچوں میں جنہیں انڈوں کا استعمال کرتے ہوئے تیار جانے والا انفلوئنزا کا ویکسین دیا گیا تھا، کوئی منفی رد عمل نہیں ہوئے؛ تعلیماتی گروپ میں تقریبا %5 بچوں نے نسبتا معمولی رد عمل کا ارتقاء ہوا جیسے کہ چھپاکی، جن میں سے زیادہ تر بغیر علاج کے ٹھیک ہو گئے۔اسمسئلہکےمزیدمطالعہکےلئےاضافیتحقیقجاریہے۔زیادہترمعاملاتمیں،صرفانڈےکیشدیدالرجی(جانلیوا)سےمتاثرلوگوںکوہیانڈےپرمبنیویکسینکوحاصلکرنےکامشورہدیاجاتاہے۔آپ کا ڈاکٹر مخصوص معلومات فراہم کر سکتا ہے۔

  18. سبسےاوپر

  19. میں نے کچھ لوگوں کو یہ کہتے ہوئے سنا ہے کہ ویکسین طویل مدتی صحت کے مسائل کا سبب بنتے ہیں جیسے کہ ڈائبٹیز، بانجھ پن، اور آٹزم۔ کیا یہ سچ ہے؟

    从2014年6 6月月月月月月月月月月月月月月月月月月月月月月月月月月月月月月月月月月月月月月月月月月月月月月月月月月月月月月月月月月月月月月月月月月月月月月月月月月月月月月月月月月月月月月月月月月月月月月月月月月月月月月月月月月日日日日日日日日日日日日日日日日日日日日日日日日日日日日日日日的的,在在在从从从自自自自自自自自自自自自自自自自自自自自自自自自自自自自自自自自自自自自自自自自自自自自自自自自自自自自自自自自自自自自自自自自自自自自自自自自自自自自自自自自自自自自自自自自自自在1746 6 6月月月月月月月月月月月月月月月月月月月月月月月月月月月月月月月月月月月月月月月月月月月月月月月月月月月月月月月月月月月月月月月月月月月月月月月月月月月月月月月月月月月月月月月月月月月月月月月月月月月月月月月月月月月月月月月月月月月月月月月月月月月月月月月月月月月月月月月月月日日日日日日日日日日日日日日日日日日日日日日日日日日日日日日日日日日日日日日日日日日日日日日日日日日日日日日日日日日日日日日日日日日日日日日日日日日日日日日日日日日日日日日日日日日日日日日日日日日日(六)(六)(六)(六)(六)(六)(六)(六)(六)(六(خسرے، گلپھڑے اور روبیلا) ویکسین آٹزم سے مربوط ہیں۔ ممکنہ ربط کی مکمل طور پر چھان بین کی گئی؛ ایک کے بعد ایک مطالعہ سے ایسی کسی ربط کا پتہ نہیں چلا، اور 1998 کے اصل مطالعہ کو باضابطہ طورلینسیٹکیطرفسےواپسلےلیاجاچکاہے،جسنےاصلمیںاسےشائعکیاتھا۔کچھویکسین،اورآٹزممیںاستعمالہونےوالےمحافظتھمیروسلکےدرمیانکسیربطکےامکانکےبارےمیںبھیمطالعےکئےگئے،دوبارہ،کسیطرحکیربطنہیںملی۔شایدیہغلطفہمیابتدائیبچپنکےویکسیناورآٹزمکیعلاماتکےابتدائیظہورکےدرمیانموجودوقتکےاتفاقکیوجہسےبرقرارہے۔اسکےعلاوہ،اسباتکاکوئیثبوتنہیںملاہےکہویکسینکیوجہسےدیگرطویلمدتیصحتکےمسائلپیداہوتےہیںجیسےکہڈائبٹیزاوربانجھپن۔

  20. سبسےاوپر

  21. مجھےمیرےبچہکیحالیہمامونیتمیںکچھمعلوماتحاصلہوئیہےجسمیںویکسینکےبہتسےممکنہضمنیاثراتدرجہیں۔اگرویکسینیشناسطرحکےتمامضمنیاثراتکاسبببنسکتاہےتوپھراسکامشورہکیوںدیاجاتاہے؟

    ہر ویکسین کے ممکنہ ضمنی اثرات ہوتے ہیں۔ عام طور پر وہ بہت ہلکے ہوتے ہیں: انجکشن والی جگہ (ایک شاٹ کے ذریعے دئیے جانے والے ویکسین کے لئے) پر درد، سر درد،اور کم درجہ کے بخار عام ویکسین کے ضمنی اثرات کی مثالیں ہیں۔ حالانکہ، شدید الرجک رد عمل کو شامل کرتے ہوئے سنگین ضمنی اثرات ممکن ہیں۔ تاہم، ان ضمنی اثرات کی موجودگی انتہائی شاذ و نادر ہے۔ (آپ کا ڈاکٹر آپ کو انفرادی ویکسینز کے خطرات کے بارے میں تفصیل سے سمجھا سکتا ہے؛ مزید معلومات عالمی ادارہ صحت کی ویب سائٹ پر بھی دستیاب ہے۔)۔ ویکسینیشن کے ممکنہ ضمنی اثرات پر غور کرتے وقت، اسے تناظر میں کرنا اہم ہے۔ جبکہ کچھ ممکنہ ضمنی اثرات سنجیدہ ہیں، وہ انتہائی شاذ و نادر ہوتے ہیں۔ جو بات یاد رکھنا ضروری ہے وہ یہ ہے کہ ٹیکہنہ لگانےکے انتخاب میں بھی سنگین خطرات موجود ہیں۔ ویکسین ممکنہ مہلک متعدی بیماریوں سے حفاظت کرتے ہیں؛ ویکسینیشن کو نظر انداز کرنا ان بیماریوں کی زد میں آنے کے اور اسے دوسروں میں پھیلانے کے خطرے کو بڑھاتا ہے۔

  22. سبسےاوپر

  23. کیاہمویکسینکےساتھکافیحفاظتیٹیسٹنگکرتےہیں؟

    ویکسین کو منظوری دیئے جانے سے قبل انسانوں میں بارہا اس کا تجربہ کیا جاتا ہے، اور انہیں جاری کرنے کے بعد اس کے منفی رد عمل کی نگرانی کی جاتی ہے۔

  24. سبسےاوپر

  25. کیاویکسینایبورٹیڈجنینیٹشویاجلیٹنپرمشتملہوتےہیں؟

    روبیلاویکسینوائرسجوکہMMR(خسرے،گلپھڑے،اورروبیلا)شاٹمیںشاملہےاسےانسانیسیللائنوںکااستعمالکرتےہوئےمتمدنکیاجاتاہے۔انمیںسےکچھسیللائنیںجنینیٹشوسےشروعکیگئیتھیجنہیں1960年代میںقانونیایبورشنزمیںمتعینکیاگیاتھا۔روبیلاویکسینکوجنریٹکرنےکےلئےکسیبھینئےجنینیٹشوکیضرورتنہیںہے۔کچھویکسینیںایکمستحکمجزوکےطورپرجلیٹنپرمشتملہوتےہیں۔اگرجلیٹنکےبارےمیںآپکےذہنمیںکسیطرحکےسوالاتہوںیااگرآپکویاآپکےبچہکوجلیٹنسےالرجیہوتواپنےڈاکٹرسےپوچھیں۔

  26. سبسےاوپر

  27. کیا یہ سچ نہیں ہے کہ ویکسین کے بجائے بہتر حفظان صحت اور غذائیت اموات اور بیماری کی شرح میںکمیکے ذمہ دار تھے؟

    دیگر عوامل کے درمیان بہتر حفظان صحت اور غذائیت، یقینی طور پر کچھ بیماریوں کے وقوع اور شدت کو کم کر سکتی ہیں۔ حالانکہ، ایک ویکسین کے تعارف سے پہلے اور بعد، کسی بیماری کے مریضوں کی تعداد کی دستاویز کاری، یہ ظاہر کرتی ہے کہ ویکسین بیماری کی شرح میں سب سے بڑی گراوٹ کے لئے انتہائی طور پر ذمہ دار ہیں۔ مثال کے طور پر، خسرہ کے ویکسین کے ابتدائی طور پر بڑے پیمانے پر استعمال میں آنے کے بعد امریکہ جیسے ترقی یافتہ ملک میں، 1950 اور 1963 کے درمیان ریاستہائے متحدہ امریکہ میں ایک سال میں 300،000 سے 800،000 خسرے کے معاملات درج کئے گئے۔ 1965 تک، امریکی خسرہ کے معاملات میں ایک ڈرامائی گراوٹ شروع ہو چکی تھی۔ 1968 میں تقریباً 22،000 معاملات درج ہوئے تھے (صرف تین سالوں میں 800,000 معاملات کی اونچائی سے لے کر %97.25 کی گراوٹ)؛ 1998 تک، معاملات کی تعداد اوسطا 100 فی سال یا اس سے کم رہی۔ ان تمام بیماریوں کے لئے جن کے ویکسین دستیاب ہیں اسی طرح کی سابقہ-ویکسینیشن گراوٹ واقع ہوئی۔ شاید اس بات کا سب سے بہتر ثبوت کہ حفظان صحت اور غذائیت نہیں، ویکسین بیماری اور موت کی شرح میں تیزی سے گراوٹ کے ذمہ دار ہیں، چیچک کا ویکسین ہے۔ اگر صرف حفظان صحت اور غذائیت ہی اکیلے متعدی امراض کو روکنے کے لئے کافی ہوتے تو، ریاستہائے متحدہ امریکہ میں چیچک کی ویکسین کے تعارف سے بہت پہلے سے چیچک کی شرحیں کم ہوگئی ہوتیں، جو کہ 1990 کے وسط تک دستیاب نہیں تھیں۔ اس کے بجائے، 1995 میں ویکسین کو متعارف کئے جانے سے پہلے، متحدہ امریکہ میں 在15755555555555151555555555555555555555555555555555555555555555555555555555555555555555555555555555555515151515555555555555555555555555555555555555555555的的的的的的的的1515151515151515151515151515155555555555555555555555555555555555555555555555555555555555555555555555552004年为85%

  28. سبسےاوپر

  29. ہم چیچک کی طرح دیگر بیماریوں کو کیوں ختم نہیں کر سکتے ہیں؟

    اصولی طور پر، تقریبا کوئی بھی متعدی بیماری جس کے لئے ایک مؤثر ویکسین موجود ہے قابل استیصال ہونا چاہئے۔ صحت عامہ کی تنظیموں کے درمیان ویکسینیشن کی کافی سطحوں اور ہم آہنگی کے ساتھ، کسی بھی بیماری کو کہیں بھی فروغ حاصل کرنے سے روکا جا سکتا ہے، بالآخر، کسی کو متاثر کئے بغیر، اسے ہلاک ہونا لازمی ہے۔ ایک قابل ذکر مثال تشنج ہے، جو وبائی ہے لیکن متعدی نہیں ہے: دیگر مقامات کے درمیان یہ عام طور پر جانوروں کے فضلہ میں پائے جانے والے ایک جراثیم کی وجہ سے پیدا ہوتا ہے۔ لہٰذا، سیارے سے مکمل طور پرکلوسٹریڈیمکزازیجراثیمکوہٹائےبغیرتشنجکاخاتمہنہیںکیاجاسکا۔)چیچکغیرمعمولیہے،حالانکہ،خصوصیاتکیترتیبنےاسکےخاتمےکوحساسبنادیاہے۔بہتسیدوسریمتعدیبیماریوںکےبرعکس،چیچکمیںکسیبھیطرحکےجانورکےذخائرنہیںہیں۔اسےجانوروںکیآبادیمیںنہیںچھپایاجاسکتااورانسانوںکومتاثرکرنےکےلئےدوبارہظہورپذیرنہیںکیاجاسکتا،جبکہکچھبیماریوںصرفایساکرسکتیہیں(مثالکےطورپر،زردبخار،کچھاعلیمخلوقکومتاثرکرسکتاہے؛اسکےبعداگرکوئیمچھراعلیمخلوقکوکاٹتاہےتو،یہانسانوںمیںواپسوائرسمنتقلکرسکتاہ۔ے)بہتسےمتعدیامراضکےخاتمےکےلیےایکاوررکاوٹمرئیتہے۔چیچکسےمتاثرلوگاعلیطورپرمرئیتھے:چیچککےجلدیدھبےآسانیسےقابلشناختتھے،لہٰذانئےمعاملاتکاآسانیپتہلگایاجاسکتاتھا۔ویکسینیشنکیکوششوںکومعاملاتکےمقاماوردیگرافرادتکممکنہانکشافکیبنیادپرمرکوزکیاجاسکتاہے۔اسکےبرعکس،پولیواسسےمتاثرہونےوالےتقریبال% 90وگوںمیںکسیبھیطرحکیمرئیعلاماتکاسببنہیںبنتا ہے۔ اس کے نتیجے میں، پولیو وائرس کے پھیلاؤ سے باخبر رہنا انتہائی مشکل ہے، جو اسے خاتمہ کا ایک مشکل ہدف بناتا ہے۔ شاید سب سے اہم بات یہ ہے کہ، چیچک کے جلدی دھبے کے ظہور کے بعد تک چیچک کے مریض ان کی متعدی کی سب سے زیادہ سطح تک نہیں پہنچنے (جو کہ، دوسروں کو متاثر کرنے کی ان کی صلاحیت ہے)۔ اس کے نتیجہ میں، جلدی دھبوں کے خروج پر متاثرہ افراد کو دور لے جانے کے فوری عمل نے پہلے سے اس کی زد میں آ چکے یر کسی فرد کو ٹیکہ لگانے کے لئے کافی وقت فراہم کیا، اور اضافی انکشافات کی روک تھام کی۔ کئی متعدی امراض اس قسم کے رد عمل کے وقت کی اجازت نہیں دیتے ہیں۔ مثال کے طور پر، خسرے کے مریض، خسرہ کے جلدی دھبوں کے ظہور سے پہلے چار دن تک متعدی بن سکتے ہیں۔ اس کے نتیجہ میں، یہاں تک کہ کسی کے بھی یہ جاننے سے پہلے کہ وہ متاثر ہیں، وہ بہت سارے دوسرے لوگوں کو وائرس منتقل کر سکتے ہیں۔

    بہتسےلوگوںکواببھیلگتاہےکہبعضبیماریوںکےلئےاستیصالممکنہے۔پولیواورگنیاکےورمکےمرض(ڈراکنکلیاسس)کےخاتمےکےلیےکوششیںجاریہیں،جبکہبہتسےعلاقوںمیںدونوںکاخاتمہکردیاگیاہے،لیکنکئیممالکمیںمقامیطورپرباقیہیں۔اسیدوران،بیماریکےخاتمےکےلئےکارٹرسینٹرانٹرنیشنلٹاسکفورسنے囊虫病(سسٹیسیروسس،لمفیٹکفلاریاسس(象皮病)(ایلیفینٹیاسس)،خسرے،گلپھڑے،پولیوں،روبیلا،اوریاوزکوشاملکرتےہوئےممکنہطورپرکئیاضافیبیماریوںکااعلانکیاہے۔

  30. سبسےاوپر

  31. 2014年5月月月月月月月月月月月月月月月月月月月月月月月月月月月月月月月月月月月月月月月月月月月月月月月月月月月月月月月月月月月月月月月月月月月月月月月月月月月月月月月月月月月月月月月月月月月月月月月月月月月月月月月月月月月月月月月月月月月月月月月月月月月月月月月月月月月月月月月月月月月月月月月月月月月月月日日日日日日日日日日日日日日日日日日日日日日日日日日日日日日日日日日日日日日日日日日日日日日日日日日日日日日日日日日日日日日日日日日日日日日日日日日日日日日日日日日日日日日日日日،

    1990年میں،بعضناقدیننے1950میںاکتسابیمدافعتکیکمیکےسنڈروم(艾滋病)کےپھیلاؤکےلئےافریقہمیںایکزندہ،کمزورپولیوویکسینکیجانچکاالزامعائدکرناشروعکردیا۔الزامعائدکرنےوالےلوگوںکاکہناتھاکہچنپانزیکےسیلزویکسینبنانےکےلئےاستعمالکئےجارہےتھے،اوریہکہانسیلزکوایکوائرسسےآلودہکردیاگیاہےجوکہکبھیکبھارچمپس:سمیینامیونوڈیفیشینسیوائرس،یاSIVکومتاثرکرتاہے۔جبویکسینافریقہمیںبچوںکودیاگیاتبانہوںنےدلیلدیکہ،SIVمیںترمیمکرکےاسےانسانیامیونوڈیفیشینسیوائرس،یHIVبانادیاگیا،جوکہ艾滋病کاسبببنتاہے۔تاہم،یہالزامات،مختلفوجوہاتکےسببجھوٹےثابتہوئے۔سبسےاہمیہکہ،کمزورپولیوویکسینچنپانزیسیلزکےساتھنہیں،بلکہبندرکےسیلزکےساتھبنایاگیاتھا۔بعدمیںویکسینکوایکتکنیککااستعمالکرتےہوئےجانچاگیاتھاجوکہوائرلکےDNA (PCRتکنیک،یاپالیمیریزچینردعمل)کاپتہلگاسکتیہے)یہSIVیHIVپارمشتملنہیںتھی۔البامہمیںبرمنگھمیونیورسٹیمیںمحققیننے2006میںمظاہرہکیاکہجبکہHIVحقیقتمیںSIVکااخذتھا،چیمپینزیجنہیںکیمرونمیں1930年代میںSIVکےساتھمتاثرکیاتھا،艾滋病کیوباکےسبسےطویلذریعہتھے——دہائیوںپہلےکمزورپولیوویکسینکیافریقہمیںجانچکیگئیتھی۔

    بیسویں صدی کے وسط میں پولیو کے ویکسین کو بندر کے سیلز کے ساتھ بنایا گیا تھا۔ انہیں لائسنس دئیے جانے کے چند سالوں بعد، مائیکروبائیالوجسٹس کو دونوں ویکسین میں بندر کا وائرس ملا۔ اس وائرس کو سمیین وائس40(SV40) نام دیا گیا تھا۔ ویکسین سے وائرس کو ختم کرنے کے لئے مینوفیکچررز نے فوری طور پر ان کی پیداوار کے طریقوں کو تبدیل کر دیا۔ ایسا ہونے کا امکان بہت کم تھا کہ کسی کو آلودہ ویکسین کی وجہ سے نقصان پہنچا 本月18日日晚晚晚晚晚晚晚晚晚晚晚晚晚晚晚晚晚晚晚晚晚晚晚晚晚晚晚晚晚晚晚晚晚晚晚晚晚晚晚晚晚晚晚晚晚晚晚晚晚晚晚晚晚晚晚晚晚晚晚晚晚晚晚晚晚晚晚晚晚晚晚晚晚晚晚晚晚晚晚晚晚晚晚晚晚晚晚晚晚晚晚晚晚晚晚晚晚晚晚晚晚晚晚晚晚晚晚晚晚晚晚晚晚晚晚晚晚晚晚晚晚晚晚晚晚晚晚晚晚晚晚晚晚晚晚晚晚晚晚晚晚晚晚晚晚晚晚晚晚晚晚晚晚晚晚晚晚晚晚晚晚晚晚晚晚晚晚晚晚晚晚晚晚晚晚晚晚晚晚晚晚晚晚晚晚晚晚晚晚晚晚晚晚晚晚晚晚晚晚晚晚晚晚晚晚晚晚晚晚晚晚晚晚晚晚晚晚晚晚晚晚晚晚晚晚晚晚晚晚晚晚晚晚晚晚晚在1740方方方方方方方方方方方方方方方方方方方方方方方方方方方方方方方方方方方方方方方方方方方方方方方方方方方方方方方方方方方方方方方方方方方方方方方方方方方方方方方方方方方方方方方方方方方方方方方方方方方方方方方方方方方方方方方方方方方方方方方方方方方方方方方方方方方方方方方方方方方方方方方方方方方方方方方方方方方方方方方方方方方方方方方方方方方方方方方方方方方方方方方方方方方方方方方方方方方方方方方方方方方方方方方方方方方方方方方方方方方方方方方方方方方方方方方方方方方方方方在本月17 17日日的半半半半半半半半半半半半半半半半半半半半半半半半半半半半半半半半半半半半半半半半半半半半半半半半半半半半半半半半半半半半半半半半半半半半半半半半半半半半半半半半半半半半半半半半半半半半半半半半半半半半半半半半半半半半半半半半半半半半半半半半半半半半半半半半半半半半半半半半半半半半半半半半半半半半半半半半半半半半半半半半半半半半半半半半半半半半半半半半半半半半半半半半半半半半半半半半半半半半半半半半半半半半半半半半半半半半半半半半半半半半半半半半半半半半半半半半半1711یا۔在40岁方方方方方方方方方方方方方方方方方方方方方方方方方方方方方方方方方方方方方方方方方方方方方方方方方方方方方方方方方方方方方方方方方方方方方方方方方方方方方方方方方方方方方方方方方方方方方方方方方方方方方方方方方方方方方方方方方方方方方方方方方方方方方方方方方方方方方方方方方方方方方方方方方方方方方方方方方方方方方方方方方方方方方方方方方方方方方方方方方方方方方方方方方方方方方方方方方方方方方方方方方方方方方方方方方方方方方方方方方方方方方方方方方方方方方方方方方方方方方方从15 15岁的维维维维维维维维维维维维维维维维维维维维维维维维维维维维维维维维维维维维维维维维维维维维维维维维维维维维维维维维维维维维维维维维维维维维维维维维维维维维维维维维维维维维维维维维维维维维维维维维维维维维维维维维维维维维维维维维维维维维维维维维维维维维维维维维维维维维维维维维维维维维维维维维维维维维维维维维维维维维维维维维维维维维维维维维维维维维维维维维维维维维维维维维维维维维维维维维维维维维维维维维维维维维维维维维维维维维维维维维维维维维维维维维维维维维维维维维维维维维在2014年6月月月月月月月月月月月月月月月月月月月月月月月月月月月月月月月月月月月月月月月月月月月月月月月月月月月月月月月月月月月月月月月月月月月月月月月月月月月月月月月月月月月月月月月月月月月月月月月月月月月月月月月月月月月月月月月月月月月月月月月月月月月月月月月月月月月日日日日日日日日日日日日日日日日日日日日日日日日日日日日日日日日日日日日日日日日日日日日日日日日日日日日日日日日日日日日日日日日日日日日日日日日日日日日日日日日日日日日日日日日日日日日日日日日日日日日日日日日日日ا۔کسی自1576日日日日方方方方方方方方方方方方方方方方方方方方方方方方方方方方方方方方方方方方方方方方方方方方方方方方方方方方方方方方方方方方方方方方方方方方方方方方方方方方方方方方方方方方方方方方方方方方方方方方方方方方方方方方方方方方方方方方方方方方方方方方方方方方方方方方方方方方方方方方方方方方方方方方方方方方方方方方方方方方方方方方方方方方方方方方方方方方方方方方方方方方方方方方方方方方方方方方方方方方方方方方方方方方方方方方方方方方方方方方方方方方方方方方方方方方方方方方方ی

    پولیوویکسینکےبارےمیںکئیطرحکےوہموںکیتشہیربعضمذہبیرہنماؤںذریعہکیجارہیہےاورجنکیحقیقتمیںکوئیبنیادیاثبوتموجودنہیںہے۔بچوںاورپولیوویکسینمیںکینسر،بانجھپن،HIV،یاذہنیپسماندگیکےدرمیانکوئیتعلقنہیںہے۔تاہم،آپکےبچہکوپولیوویکسینکاٹیکہلگوانےمیںناکامیمستقلجسمانیمعذوریکاسبببنسکتیہے۔

  32. سبسےاوپر

  33. 卡介苗

    卡介苗(BCG)ویکسینکو结核病کےبہتسےمعاملاتکےساتھپاکستان،بھارتاورافغانستانجیسےترقییافتہممالکمیںقومیویکسینیشنپروگرامکےحصےکےطورپراستعمالکیاجاتاہے۔ویکسین结核病بیکٹیریاکیوجہسےپلمونریبیماریسےبچوںکیحفاظتنہیںکرتا،نہہییہفعالبیماریمیںفروغحاصلکرنےسےپوشیدہ结核病کےانفکیشنکیروکتھامکرتاہے۔تاہم،یہبچوںمیںکچھسنگین结核病کیپیچیدگیوںکوروکتھامکرتاہے،جیسےکہ结核病میننجائٹس۔ویکسینکوعامطورپربالغوںمیںاستعمالنہیںکیاجاتا،اوربچوںمیںویکسینبیماریکےپھیلاؤکیروکتھامنہیںکرتیہے۔1921年卡介苗ویکسینکوکےبعدسےاستعمالکیاجارہاہے۔بہتسےمحققینایکزیادہمؤثرتپدقویکسین(ٹیوبرکلوسس)تیارکرنےکےلئےکامکررہےہیں۔امیداسویکسینکوتیارکرنےکیہےجوکہتپدقسےہونےوالےانفیکشنکیروکتھامکرسکے،جسسےعالمیسطحپربیماریکاعظیمبوجھکمہوجائےاور结核病کےبیکٹیریاکیترسیلبھیکمہوجائے۔

  34. سبسےاوپر

  35. مجھےجگرکےمسائلنہیںہیںاورنہہیمیرےخاندانکوہیپاٹائٹسہے۔ہیپاٹائٹس بی ویکسین بچوں کے لئے کیوں ضروری ہے؟

    ہیپاٹائٹسبیوائرس(HBV)متعدیجسمکےسیال(یعنی،خون،تھوک،اورمنی)کےساتھرابطےمیںآنےسےپھیلتاہے۔یہجنسیطورپر،یاانجیکشنکےادویاتیاستعمالکےسامانکےاشتراک،نیڈلاسٹک،متاثرہماںکےذریعہپیداہونےوالےبچہمیں،ایکمتاثرہشخصکےکھلےگھاووںیازخموںکےساتھرابطہمیںآنےسے،اورایکمتاثرہشخصکےریزرساورٹوتھبرشکےاشتراکسےپھیلسکتاہے۔کاٹنےکےذریعہلعابترسیلکےایکذریعہکےطورپرکامکرسکتاہے۔شدیدHBVانفیکشنسےمتاثر% 95صدبالغٹھیکہوجاتےہیںاورمسلسلم(ستقلطورپر)متاثرنہیںہوجاتے،اگرچہجسمکےاخراجکیترسیلکےذریعہوہشدیدمرحلہکےدوراندوسرےلوگوںکومتاثرکرسکتےہیں۔دوسرےافرادمستقلطورپرمتاثرہوجاتےہیں——اورایکبہتہیطویلمدتتکدوسروںکومتاثرکرنےکےقابلہوتےہیں(بہتسےمعاملاتمیںکئیسالوںتک)——اورجگرکیشدیدبیماریخطرےمیںمبتلاہوجاتےہیں۔بچوںکےلئےصورتحالمختلفہے:شیرخواربچوںاورHBVسےمتاثربچوںمیںبالغوںکےمقابلہمیںمستقلطورپرمتاثرہونےاوراسوجہسےسنگین،تاخیرسےپیداہونےوالیپیچیدگیوںکےامکاناتزیادہہیں۔乙肝病毒کےساتھدائمیانفیکشنسروسس،جگرکیناکامی،اورجگرکےکینسرکاباعثبنسکتاہے۔لہذا،ویکسیناسمہلکبیماریکوروکنےکاایکمؤثرطریقہہے۔

  36. سبسےاوپر

  37. تشنج کے ویکسین کا میرے بچہ کے ساتھ کیا تعلق ہے؟ وہ کہیں گرا نہیں تھا اور نہ ہی اسے کسی طرح کے کٹس یا چوٹیں لگی ہیں۔

    تشنج بیکٹیریا کے ذریعہ پیدا ہونے والی اعصابی نظام کی ایک بیماری ہے جسےکلاسٹریڈیمکزازیکہا جاتا ہے جو کہ ماحول میں وسیع پیمانے پر موجود ہے۔ یہ بیکٹیریم دو ایکسو ٹاکسنز پیدا کرتا ہے، جن میں سے ایک (ٹیٹینو اسپیسمن) ایک نیورو ٹاکسن ہے جو تشنج کی علامات کا باعث بنتا ہے۔ بیکٹیریا آکسیجن کی عدم موجودگی میں اس نیورو ٹاکسن کو پیدا کرتا ہے جیسے کہ جراثیم سے پاک آلہ سے کٹےہونے پر، گندے زخموں اور نال (امبیلیکل کورڈ) میں۔

    تشنج کے %10 اور %20 کے درمیان معاملات موت کا سبب بنتے ہیں، اگرچہ اموات کا امکان 60 سال سے زیادہ عمر کے مریضوں، ٹیکہ لگانے سے محروم افراد میں زیادہ ہے۔ درج کئے گئے تشنج (’’عمومی تشنج‘‘) کی سب سے عام قسم میں، مروڑ 3 سے 4 ہفتوں تک جاری رہتی ہے، اور اسے ٹھیک ہونے میں مہینوں لگ سکتے ہیں۔ 2014 میں، عالمی سطح پر تشنج کے 11,367 اور 5 سالوں سے بھی کم (2011) میں موت کے 72,600 معاملات درج ہوئے تھے۔ تشنج کے خلاف تحفظ فراہم کرنے کے لئے، دو ماہ کی عمر میں دی گئی پہلی خوراک کے ساتھ، بچپن کے حفاظتی ٹیکوں کا شیڈیول ویکسین (15月18日)各各各各各各各各各各各各各各各各各各各各各各各各各各各各各各各各各各各各各各各各各各各各各各各各各各各各各各各各各各各各各各各各各各各各各各各各各各各各各各各各各各各各各各各各各各各各各各各各各各各各各各各各各各各各各各各各各各各各各各各各各各各各各各各各各各各各各各各各各各各各各各各各各各各各各各各各各各各各各各各各各各各各各各各各各各各各各各各各各各各各各各各各各各各各各各各各各各各各各各各各各各各各各各各各各各各各各各各各各各各各各各各各各各各各各各各各各各各在157 5 5 5月月月月月月月月月月月月月月月月月月月月月月月月月月月月月月月月月月月月月月月月月月月月月月月月月月月月月月月月月月月月月月月月月月月月月月月月月月月月月月月月月月月月月月月月月月月月月月月月月月月月月月月月月月月月月月月日日日日日日日日的的的的的的的的的,在在在在在在在在的的的的各各各各各各各各各各各各各各各各各各各各各各各各各各各各各各各各各各各各各各各各各各各各各各各各各各各各各各各各各各各各各各各各各各各各各各各各各各各各各各各各各各各各各各各各各各各各各各第五节

  38. سبسےاوپر

  39. ٹائیفائیڈ ویکسین لگوانا کیوں ضروری ہے؟ اور کیوں کچھ ڈاکٹر اسے موسم بہار میں لگوانے کا مشورہ دیتے ہیں؟

    آلودہ خوراک اور پانی کے ذریعہ ٹائیفائیڈ کا بخار ایک شخص سے دوسرے شخص میں پھیلتا ہے۔ ترسیل آنتوں کی زبانی روٹ کے ذریعہ ہوتی ہے، اس کا مطب یہ ہے کہ آلودہ فضلات (اور کبھی کبھی پیشاب) پانی کی فراہمی یا غذا کی فراہمی میں داخل ہو سکتے ہیں، اس کے بعد ان کا استعمال ہو سکتا ہے اور اس سے دوسرے متاثر ہو سکتے ہیں۔ عالمی سطح پر سالانہ ٹائیفائیڈ بخار کے 21 ملین اور اموات کے 220,000 معاملات واقع ہوتے ہیں۔ پاکستان، بھارت، نائیجیریا، اور افغانستان کی طرح بہت سے ترقی یافتہ ممالک میں، بجلی کی کمی اور حفظان صحت اور صاف صفائی کے حالات میں کمی کی وجہ سے غذا کو محفوظ درجہ حرارت پر نہیں رکھا جاتا ہے۔ اس لئے، گرم مہینوں میں ٹائیفائیڈ بخار پیدا کرنے والے بیکٹیریا کی ترسیل کا خطرہ زیادہ ہوتا ہے، اور موسم گرما کے مہینوں کی گرمی سے پہلے ٹائیفائیڈ بخار کے احتیاطی ویکسین کا مشورہ دیا جاتا ہے۔ ان علاقوں میں جہاں ٹائیفائیڈ کے ویکسین کو ایک معمول کے طور پر استعمال کیا جاتا ہے وہاں پر اسے عام طور پر ہر تین سے سات سال میں لئے جانے کا مشورہ دیا جاتا ہے۔


وسائل:

بیماریوں کے کنٹرول اور روک تھام کے مراکز۔使用疫苗预防和控制流感:免疫实践咨询委员会的建议,美国,2015-16流感季节. 16/4/2017 کو رسائی شدہ۔

بیماریوں کے کنٹرول اور روک تھام کے مراکز۔全球根除天花的历史和流行病学(10.4 MB)。16/4/2017 کو رسائی شدہ۔

费城儿童医院。疫苗安全:免疫系统与健康. 16/4/2017 کو رسائی شدہ۔

费城儿童医院。疫苗安全吗?16/4/2017 کو رسائی شدہ۔

بیماریوں کے کنٹرول اور روک تھام کے مراکز۔水痘(水痘)疫苗问答. 16/4/2017 کو رسائی شدہ۔

卡特中心。国际根除疾病工作队. 16/4/2017 کو رسائی شدہ۔

今天是医学版。AAAAI:鸡蛋过敏对流感疫苗没有障碍. 16/4/2017 کو رسائی شدہ۔

pdf文档کو پڑھنے کے لئےAdobe Readerکو ڈاؤن لوڈ اور انسٹال کریں۔

گزشتہ اپ ڈیٹ 16 اپریل 2017